38

شمالی کوریا کے صدر نے کہا ہے کہ اسرائیل نامی کوئی ریاست ہی نہیں تو اس کا دار الحکومت کہاں ہو سکتا ہے.

شمالی کوریا کے صدر نے کہا ہے کہ اسرائیل نامی کوئی ریاست ہی نہیں تو اس کا دار الحکومت کہاں ہو سکتا ہے. شمالی کوریا نے اب تک اسرائیل کو تسلیم نہیں کیا ہے اس لیے کوریائی میڈیا اسرائیل کی جگہ فلسطین کا لفظ ہی استعمال کرتا ہے۔
اسلامی حکمرانوں سے کہیں بہتر تو یہ لوگ ہیں جو یہودیوں کیساتھ کھل کر مخالفت کرتے ہیں، آج ہمارے لیڈرز اپنی ذاتی پراپرٹیز اور کرسیاں بچانے کی فکر میں ہیں، انہیں اسلام اور ملت اسلام کے ساتھ کچھ بھی لینا دینا نہیں، اتنی غیرت بھی نہیں ہمارے حکمرانوں میں۔
یہ بندہ اتمامِ حجت کر گیا بےحس مسلم حکمرانوں کیلئے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں